Jump to content

  • Log in with Facebook    Log in with Windows Live    Log In with Google      Sign In   
  • Create Account


- - - - -

سلیم صافی کا مضمون اور رافضی پراپیگنڈہ مشینری کے اعتراضات


  • Please log in to reply
2 replies to this topic

#1 OFFLINE   kalaam

kalaam

    ليغيظ بهم الكفار

  • Moderator
  • Topics: 888
  • Posts: 3,447
  • Thanked: 1267 times
  • Joined: 26-December 09
  • Local time: 01:02 AM
  • Gender:Male
  • Location:خیبر، پاکستان
  • Interests:ولهم فيها من كل الثمرات
  • Religion:Islam (Sunni)

Posted 12 February 2012 - 05:50 PM

Posted Image


Muhammad صلى الله عليه وآله وصحبه وسلم

Answering Ansar Unveiled



WHO IS MURTAD MAL'OON HASAN SHEHATA!




اہم کتب : مجموعہ تفاسیر لکھنوی، منہاج السنہ ، حقیقی دستاویز ، مطرقۃ الکرامہ ، آیات بینات ، یازدہ نجوم ، مـــــزیــــــــد کـــــــتـــــــب



اسقاط جنین کا من گھڑت واقعہ - عطیہ العوفی کا احوال - حضرت ابوبکر اور شرک والی روایت - چند شیعی اعتراضات کے جوابات - ملا معین سندھی کا احوال - شیعہ کتب سے کلمہ کا ثبوت - کیا اہل قبلہ ہونے کی وجہ سے شیعہ مسلمان ہو سکتے ہیں - کیا حضرت معاویہ نے حضرت حسن کو زہر دیا - ایک ضعیف اثر پر بحث - شیعہ اور تحریف قرآن - مختار ثقفی کے متعلق شیعی روایات - تاریخ یعقوبی اور تاریخ مسعودی شیعہ کتب ہیں - ام المومنین سے کیا مراد ہے - کیا فدک ہدیہ تھا یا میراث - شیعہ فورمز کے جاہلوں کا آپریشن - یزید نام رکھنے والے صحابہ کرام کی فہرست - امامت پر ایک شیعہ سنی مباحثہ - شیعہ کتب میں اہلبیت اور دیگر ممدوحین کا احوال - قرآن مجید اور مسئلہ توریث انبیاء - رجب کے کونڈے - مصحف فاطمہ، کتاب جفر اور ائمہ کی تضاد بیانیاں - شیعی دھرم اپنی کتب کی تاریکیوں میں -


#2 OFFLINE   kalaam

kalaam

    ليغيظ بهم الكفار

  • Topic Starter
  • Moderator
  • Topics: 888
  • Posts: 3,447
  • Thanked: 1267 times
  • Joined: 26-December 09
  • Local time: 01:02 AM
  • Gender:Male
  • Location:خیبر، پاکستان
  • Interests:ولهم فيها من كل الثمرات
  • Religion:Islam (Sunni)

Posted 12 February 2012 - 06:54 PM

سلیم صافی کے مضمون کے جواب میں شیعہ علماء کونسل کی جانب سے ناراضگی کا اظہار کیا گیا۔ اپنے مضمون میں ، جو کہ شیعہ پراپیگنڈہ ویب سائٹ اسلامک ٹائمز میں شائع ہوا، شیعہ علماء کونسل کے سیکرٹری اطلاعات سید اظہار نقوی سلیم صافی کو مخاطب کرتے ہوئے فرماتے ہیں۔

Quote

آپ نے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ (یقیناً آپ کی مراد تحریک جعفریہ پاکستان ہے) کو سپاہ صحابہ کے ساتھ کھڑا کرنے کی کوشش کر کے پاکستانی اسٹیبلشمنٹ کی اسی روایتی پالیسی کی ترجمانی کی، جس میں وہ توازن اور برابری کا فارمولا قائم کرتے ہوئے فرقہ پرستوں کو اسلام پرستوں کے ساتھ، دہشتگردوں کو امن پسندوں کے ساتھ، پاکستان دشمنوں کو محب وطن تنظیموں کے ساتھ اور قاتل گروہوں کو مقتول فریق کے ساتھ کھڑا کرتے ہیں۔ آپ نہیں جانتے کہ سابق ڈکٹیٹر پرویز مشرف نے بھی اسی پالیسی کے تحت تحریک جعفریہ اور سپاہ صحابہ کو ایک پلڑے میں رکھ پابندی لگائی اور پھر اس بات کا اظہار بھی کیا کہ تحریک جعفریہ یا اس کی قیادت پر پابندی نہ لگاتا تو معاملہ یکطرفہ طور پر میرے گلے میں پڑ جاتا، (ہماری معلومات کے مطابق تحریک جعفریہ پر پابندی کے پس پردہ کچھ بیرونی احکامات کا معاملہ بھی تھا جس کے آگے پرویز مشرف نے ہتھیار ڈال دئیے تھے) جبکہ سپاہ صحابہ کے بارے اُس نے کبھی ایسی رائے نہیں دی۔
ہمیں ابھی تک معلوم نہیں تھا کہ پرویز مشرف کے قیمتی اقوال آج بھی اتنی حیثیت رکھتے ہیں کہ اس کی بنیاد پر ہم ایک جماعت کو دہشت گرد اور انتہا پسند جبکہ دوسری جماعت کو امن پسند قرار دے سکے۔ سید اظہار نقوی واقعی لائق تعریف ہیں کہ آج کے زمانے میں ہمیں پرویز مشرف کی قیمتی باتوں سے محظوظ کر رہے ہیں۔

Quote

پرویز مشرف نے جب متحدہ مجلس عمل کے قائدین سے ملاقات کی تھی تب بھی اس نے اسی بات کا اظہار کیا تھا جس کے گواہ ایم ایم اے کے محترم و معزز قائدین ہیں؟؟ کیا آپ نہیں جانتے کہ تحریک جعفریہ اور اس کے قائد علامہ ساجد علی نقوی پابندی سے پہلے اور پابندی کے بعد ہمیشہ مقتول فریق کے ترجمان اور دہشتگردی کا شکار ہیں۔؟؟ ساجد نقوی نے کبھی دہشتگردی کرنے، دہشتگردی سوچنے اور دہشتگردی کا پرچار کرنے کی تعلیم نہیں دی۔ انہوں نے خودکش حملوں جیسی اذیت ناک دہشتگردی کے باوجود اپنے لوگوں کو صبر کی تلقین کی ہے اسی وجہ سے ان کے مسلک میں موجود انتہاپسند ان کے مخالف ہیں۔
پرویز مشرف تو روافض پر حجت ہونگے نا، اب ہم پر حجت تھوڑی ہیں۔

Quote

لیکن دوسری طرف سپاہ صحابہ کی بنیاد ہی دہشتگردی پر رکھی گئی ہے، آج بھی لشکر جھنگوی کا سربراہ ملک اسحاق اور سپاہ صحابہ کا سربراہ محمد احمد لدھیانوی مل کر جلسے کرتے ہیں اور شیعوں کو قتل کرنے کا واضح اعلان کرتے ہیں۔ سپاہ صحابہ اور لشکر جھنگوی کے قاتل کے ہونے میں اس لئے شائبہ نہیں کہ آپ کے سامنے انہوں نے نہ صرف شیعہ مکتب فکر بلکہ اہل سنت بریلوی، دیوبندی اور اسلام سے باہر قادیانی، عیسائی و دیگر مذاہب کے پیروکاروں اور پاکستان کے مہمانوں کا قتل عام کیا ہے۔ اگر شک ہے تو خود مولانا مفتی حسن جان پشاور کا قتل، مولانا فضل الرحمن پر قاتلانہ حملے، جماعت اسلامی اور جے یو آئی کے متعدد افراد کے بہیمانہ قتل کے واقعات کا مطالعہ فرما لیں۔
ہم کہتے ہیں کہاں ہیں وہ واضح اعلانات جو شیعوں کو قتل کرنے کے بارے میں ہیں؟ یہ شیعہ علماء کونسل کا فرض ہے کہ اپنے دوعوں کو ثابت کریں۔ قتل کے واقعات ہزاروں نے پڑھے ہیں، آپ کو اس میں سپاہ صحابہ کا ہاتھ نظر آتا ہے تو پیش کیجئیے۔ فقط دعوے ہیں جن کو سیکرٹری اطلاعات صاحب دہرا رہے ہیں، اور جن کو سن سن کے سب کے کان پک گئے ہیں۔

Quote

لیکن تحریک جعفریہ اور ساجد نقوی پر اس طرح کا کوئی الزام نہ ماضی میں تھا اور نہ اب ہے۔ آپ نہیں جانتے کہ تحریک جعفریہ ایک مسلک اور مکتب کی نمائندہ جماعت ہونے کے باوجود اپنے آپ کو مسلک اور مکتب کی قید سے بالاتر سمجھتی ہے، ملی یکجہتی کونسل سے لے کر متحدہ مجلس عمل کا سفر اس بات کا بین ثبوت ہے۔ حالانکہ کسی مسلک یا مکتب کی نمائندگی میں کوئی قباحت نہیں لیکن اس کے باوجود ہماری جماعت اور قیادت نے اپنے آپ کو اس سے بالا و ارفع رکھا ہوا ہے اور ہمیشہ عالم اسلام اور امت مسلمہ کی بات کرتے ہیں۔؟؟
تحریک نفاذ فقہ جعفریہ پر بہت سے الزامات ہیں، اب آپ کو معلوم نہیں، وہ الگ بات ہے۔ مہرام علی کا کیس ریکارڈ میں موجود ہے۔


On January 18, 1997, Mehram Ali, a member of militant Shia organization called Tehrik Nifaz Fiqah-i-Jaferia (TNFJ), detonated a remote-controlled bomb in the vicinity of the Lahore courts, where the two leaders of the Sepah-Sehaba Pakistan (SSP), an anti-Shia group of Sunnis, were brought for a hearing before the additional session judge. The explosion killed twenty-three people, including the two Sunni leaders, and injured more than fifty people. Mehram Ali was caught on the spot but his trial before the Sessions court went forth slowly.

Following the introduction of ATA 1997 the case was transferred to the newly constituted anti-terrorist court. The court convicted Mehram Ali on twenty-three counts of murder and various other sentences relating to the bombing, and sentenced him to death. He filed an appeal before the newly constituted Anti-Terror Appellate (ATA) Tribunal, also in Lahore. The ATA upheld his conviction. The petitioner then filed a writ petition before the Lahore High Court claiming, among other things, that the formation of the special courts violated the provisions of the Constitution. The Lahore High Court claimed jurisdiction to hear the appeal, but held that the conviction should still stand. Mehram Ali then filed an appeal to the Supreme Court of Pakistan. In its decision, Mehram Ali Versus Federation of Pakistan,[29] the Court upheld Mehram Ali’s conviction and he was later executed.

پاکستان انسٹیٹیوٹ فار پیس سٹڈیز

Quote

دوسری طرف سپاہ صحابہ کسی مسلک یا مکتب کی نمائندگی نہیں کرتی۔ مسلک دیوبند کی نمائندہ جماعتیں جے یو آئی (ف) اور جے یو آئی (س) یا پھر روشن فکر دیوبندیوں کی ترجمانی جماعت اسلامی کرتی ہے۔ ان جماعتوں کو صرف مسلک دیوبند کے پیروکار نہیں بلکہ تمام مسالک اور مکاتب کے پیروکار تسلیم بھی کرتے ہیں اور ان کا احترام بھی کرتے ہیں۔ لیکن
سپاہ صحابہ کو دوسرے مسالک تو درکنار خود دیوبندی حضرات بھی اپنا نمائندہ یا ترجمان تصور نہیں کرتے، بلکہ انہیں انتہا پسند اور دہشت گرد کہتے ہیں۔

اس حقیقت کے موجودگی میں آپ کی طرف سے تحریک جعفریہ اور سپاہ صحابہ کو ایک ہی پلڑے میں تولنا کس قدر زیادتی ہے؟؟ کیا آپ نہیں جانتے کہ پاکستان کے تمام مسالک کے تمام بڑے اور جید مسلمہ دینی و سیاسی قائدین تحریک جعفریہ کو اپنا ہم مرتبہ، ہم فکر، ہم مقام اور علامہ ساجد نقوی کو اپنا دوست سمجھتے ہیں۔؟؟ لیکن انہی قائدین کی طرف سے اگر سپاہ صحابہ کے لیے اس قسم کے جذبات کا اظہار کیا گیا ہو تو آپ فرما دیں۔؟؟ آپ نہیں جانتے کہ متحدہ مجلس عمل جیسے پاکستان کے تاریخی اور مثالی اتحاد میں پاکستان کے تمام مسالک اور مکاتب کی سب سے بڑی نمائندہ جماعتیں شامل تھیں، لیکن ان محترم قائدین نے سپاہ صحابہ کو اس لائق نہیں سمجھا کہ وہ کسی بھی مسلک یا مکتب حتٰی کہ کسی چھوٹے سے گروہ کی ہی ترجمانی کرتے ہوئے اتحاد میں شامل ہو جائے۔؟؟
ہم شیعی پراپیگنڈہ ویب سائٹ اسلامک ٹائمز کا مولانا سمیع الحق سے انٹرویو کا ایک حصہ ہی یہاں پر نقل کرنا کافی و شافی سمجھتے ہیں۔

Quote

اسلام ٹائمز: سپاہ صحابہ کالعدم تنظیم ہے، وزیر قانون پنجاب کہتے ہیں کہ دفاع پاکستان کونسل کی کانفرنس میں کالعدم تنظیم کے پرچم لہرانے پر خفیہ ایجنسیوں کی رپورٹ پر مقدمہ درج ہو گا۔؟

مولانا سمیع الحق: ہم نے کالعدم سپاہ صحابہ نہیں، اہل سنت والجماعت کو دعوت دی تھی، جو کالعدم تنظیم نہیں ہے۔ مذہبی جماعتوں کو کالعدم قرار دینے والے حکمران کون ہوتے ہیں، پرچم لہرائے گئے تو کیا فرق پڑتا ہے۔ رانا ثناءاللہ خان کو کیا تکلیف ہے۔؟ اس کے پیٹ میں مروڑ کیوں اٹھ رہے ہیں۔؟ وہ کس کے نقش قدم پر چل رہے ہیں۔؟ امریکی اشاروں پر دینی قوتوں کو کالعدم قرار دیا گیا، تاکہ مسلمانوں کو اللہ کا نام لینے سے منع کیا جا سکے۔ مذہبی جماعتوں کو کالعدم قرار دینے والے سامراج کے آلہ کار بنے ہوئے ہیں۔


http://www.islamtime...6d0va.k-iw.html
سیکرٹری اطلاعات کی اطلاعات کافی ناقص معلوم ہوتی ہیں۔

Quote

کیا آپ نہیں جانتے جب پرویز مشرف نے پابندی لگانے کے بعد علامہ ساجد نقوی کو سپاہ صحابہ کے مقتول ایم این اے اعظم طارق کے قتل میں گرفتار کر لیا تھا تو محترم قاضی حسین احمد اور محترم مولانا فضل الرحمن نے ببانگ دہل پریس کانفرنسوں اور ہزاروں عوام کے اجتماعات میں علامہ ساجد نقوی کی بے گناہی کا واضح اعلان کیا تھا اور ہر فورم پر اسی قسم کی گواہی دینے کا عہد کیا تھا۔ اس کے علاوہ اسی مقدمے میں محترم لیاقت بلوچ جیسے جید سیاستدان کی گواہی اب بھی تاریخ کا حصہ ہے، لیکن دوسری طرف سپاہ صحابہ کی بے گناہی یا امن پسندی کی گواہی اگر کسی نے دی ہو تو آپ فرما دیں؟؟ بلکہ ماضی قریب کی تاریخ میں تو سپاہ صحابہ کے مقتول ایم این اے اعظم طارق کا یہ بیان بھی ریکارڈ پر موجود ہے کہ اسمبلی کے اندر اور باہر مولانا فضل الرحمن اور قاضی حسین احمد نے اس سے ملنے سے بھی انکار کر دیا ہے اور وہ مولانا فضل الرحمن کے گھر کے باہر کافی وقت انتظار کرتا رہا لیکن اسے ملنے کی اجازت نہیں ملی۔
ابھی ہم نے مولانا سمیع الحق کے ساتھ انٹرویو کا جو حصہ یہاں پیش کیا ہے، وہی کافی ہے۔ ہاں اگر آپ کہہ دیں کہ مولانا سمیع الحق کے بارے میں آپ کو کچھ پتہ ہی نہیں تو فرمائیے۔ آپ سے اس کی توقع بالکل ہو سکتی ہے کیونکہ آپ کی اطلاعات کچھ ایسی ہی معلوم ہوتی ہیں۔

Quote

ان تمام حقائق کے باوجود بھی آپ تحریک جعفریہ اور سپاہ صحابہ کو ایک ہی ترازو میں رکھیں گے۔؟؟ کیا آپ نہیں جانتے کہ تحریک جعفریہ کے قائد علامہ ساجد نقوی نے قانون پسندی اور آئین دوستی کا ثبوت دینے کے ساتھ ساتھ آپ جیسے معترضین کو مطمئن کرنے اور اپنے اوپر مسلکی چھاپ ختم کرنے کے لیے اپنی جماعت کو ’’تحریک نفاذ فقہ جعفریہ‘‘ سے تبدیل کر کے پہلے ’’تحریک جعفریہ‘‘ بنایا پھر اس کے بعد ’’اسلامی تحریک پاکستان‘‘ بنایا، تاکہ وہ ہمارے وسیع النظر اور وسیع القلب ہونے کا مشاہدہ کر سکیں (ہمارے اس عمل پر پاکستان کی تمام دینی و سیاسی جماعتوں نے تحسین و تائید کا اظہار کیا لیکن آپ کی معلومات کی حد ہے کہ آپ ابھی تک تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے خول سے باہر نہیں نکلے، حالانکہ اس باب کو بند ہوئے آج بیس سال کا عرصہ بیت چکا ہے)۔
لیکن دوسری طرف سپاہ صحابہ نے اپنا منشور نہیں بدلا، اپنا جھنڈا نہیں بدلا، اپنے غلیظ نعرے نہیں بدلے، اپنا طرز عمل نہیں بدلا، حتٰی کہ اپنی دہشتگردانہ کارروائیوں سے بھی توبہ نہیں کی، بلکہ حال ہی میں لشکر جھنگوی کے سربراہ کی رہائی کے بعد ہونے والے جلسوں میں دہشتگردی کو ازسرنو شروع اور منظم کرنے کے اعلانات کئے ہیں۔ اس واضح فرق کے بعد بھی آپ سپاہ صحابہ اور تحریک جعفریہ کو ایک صف میں شمار کریں تو اللہ ہی حافظ ہے؟؟ کیا آپ نہیں جانتے کہ تحریک جعفریہ یا اس کے قائد علامہ ساجد نقوی نے کسی اسلامی مکتب فکر کو کبھی کافر نہیں کہا، حتٰی کہ شیعہ کو کافر کہنے والوں کے خلاف بھی کفر کا فتویٰ اور کافر کا لفظ استعمال نہیں کیا۔
اس کے بارے میں اتنا ہی کہا جا سکتا ہے۔

ہاہاہاہاہاہا

Quote

دوسری طرف سپاہ صحابہ کی بنیاد ہی کفر کے فتوے کے اوپر رکھی گئی۔ آپ کی سماعتوں میں وہ نعرہ ابھی تک نہیں گونج رہا کہ ’’کافر کافر شیعہ کافر۔ جو نہ مانے وہ بھی کافر‘‘ یعنی پورا عالم اسلام جو شیعوں کو کافر نہیں مانتا وہ بھی کافر ہے؟؟ کفر اور اسلام کے واضح فرق کے باوجود بھی آپ تحریک جعفریہ اور سپاہ صحابہ کو ایک لائن میں لگا دیں تو اس سے بڑی ناانصافی کیا ہو گی؟؟ کیا آپ نہیں جانتے کہ تحریک جعفریہ اور اس کی قیادت فقط پاکستان کی سطح پر نہیں بلکہ عالمی سطح پر مسلمہ حیثیت کی حامل ہے۔؟؟ دنیا بھر میں تمام اسلامی تحریکوں کے ساتھ تحریک جعفریہ اور اس کی قیادت کے قریبی تعلقات اور گہرے مراسم ہیں۔
شیعہ کو کافر کہنا اگر انتہا پسندی ہے تو یہ اتہا پسندی برصغیر کے ہزاروں علماء کر چکے۔

Quote

جس کے تازہ ترین شواہد خود میرے اپنے سامنے اس وقت آئے، جب میں گذشتہ ہفتے تہران میں عالمی اسلامی بیداری کانفرنس میں شرکت کے لیے گیا تو وہاں مصر، یمن، سوڈان، شام، لبنان، بحرین، لیبیا، افغانستان، انڈونیشیا، ملائشیا، بوسنیا، کویت، الجزائر سمیت ۷۳ ممالک سے اسلامی تحریکوں کے نمائندگان شریک تھے یہ تمام لوگ علامہ ساجد نقوی، قاضی حسین احمد اور مولانا فضل الرحمن کو جانتے، پہچانتے اور پسند کرتے ہیں اور انہی قائدین کی جماعتوں اور تحریکوں کی تائید و نصرت کا اظہار کرتے رہے، لیکن جب بھی ان کے سامنے سپاہ صحابہ، لشکر جھنگوی یا اس قسم کے دیگر گروہوں کا ذکر ہوا تو انہوں نے سخت نفرت کا اظہار کیا۔ حتٰی کہ عرب ممالک کی سخت گیر سلفی اور حنفی تحریکوں اور اخوان المسلمون نے بھی سپاہ صحابہ وغیرہ سے نفرت اور برات کا اعلان کیا لیکن آپ کے تجزیے کے حد ہے کہ آپ نے تحریک جعفریہ کو کس گروہ کے ساتھ متوازن کر دیا۔؟؟
آپ کس کھیت کے مولی ہو جناب جو آپ پر اعتبار کیا جا سکے۔ بہرحال اگر ان پر حقیقت ظاہر ہو اور ان میں انصاف پسندی ہو تو نفرت آپ سے کرینگے۔

Quote

اس وقت بھی تحریک جعفریہ کے قائد علامہ ساجد نقوی پاکستان سے باہر دو انٹرنیشنل کانفرنسوں میں شرکت کے لیے گئے ہوئے ہیں۔ آپ ہی فرمائیں کہ سپاہ صحابہ کو کبھی کسی سنی اسلامی ملک نے ہی اس لائق سمجھا ہو کہ وہ کسی مسلک یا مکتب یا پاکستانی عوام و مسلمین حتٰی کہ اپنے ہی گروہ کی نمائندگی کرتے ہوئے کسی عالمی کانفرنس میں شرکت کرے۔؟؟ بس یوں سمجھ لیجئے کہ ایک طرف پورا مسلک، مکتب اور اس کی نمائندہ و ترجمان جماعت ہے اور دوسری طرف سے مٹھی بھر عناصر پر مشتمل ایک انتہا پسند، شدت پسند، فرقہ پسند اور جنونی و دہشتگرد گروہ ہے۔ بھلا ان دونوں میں کیا مشابہت؟ کیا میل جول؟ کیا توازن؟ کیا ربط و تعلق؟ اور کیا برابری؟
یہ انٹرنیشنل کانفرنسیں آپ کو ہی مبارک ہو۔

:biggrin:

بھلا یہ کونسا اصول آ گیا کہ ایک جماعت کی اگر اس کا پورا فرقہ حمایت کرے تو وہ امن پسند کہلائے؟ اور اکثریتی رائے کا قانون شیعوں کو کب پسند آیا؟

اگر کانفرنسوں میں شرکت ہی امن پسند ہونے کی نشانی ہے تو پاکستان میں سپاہ صحابہ درجنوں کانفرنسوں میں شریک رہی۔ مولانا اعظم طارق قومی اسمبلی میں باقاعدہ منتخب ہوئے۔ ہمیں تو سیکرٹری اطلاعات کی جہالت پر حیرانگی ہوتی ہے، لیکن کیا کیا جائے، شیعہ مذہب میں یہ معمول کی بات ہے۔ یہ یاد آنے کے بعد ہماری حیرانگی میں یکدم کمی ہو جاتی ہے۔
  
آپ کا مخلص
عبد اللہ خان


Muhammad صلى الله عليه وآله وصحبه وسلم

Answering Ansar Unveiled



WHO IS MURTAD MAL'OON HASAN SHEHATA!




اہم کتب : مجموعہ تفاسیر لکھنوی، منہاج السنہ ، حقیقی دستاویز ، مطرقۃ الکرامہ ، آیات بینات ، یازدہ نجوم ، مـــــزیــــــــد کـــــــتـــــــب



اسقاط جنین کا من گھڑت واقعہ - عطیہ العوفی کا احوال - حضرت ابوبکر اور شرک والی روایت - چند شیعی اعتراضات کے جوابات - ملا معین سندھی کا احوال - شیعہ کتب سے کلمہ کا ثبوت - کیا اہل قبلہ ہونے کی وجہ سے شیعہ مسلمان ہو سکتے ہیں - کیا حضرت معاویہ نے حضرت حسن کو زہر دیا - ایک ضعیف اثر پر بحث - شیعہ اور تحریف قرآن - مختار ثقفی کے متعلق شیعی روایات - تاریخ یعقوبی اور تاریخ مسعودی شیعہ کتب ہیں - ام المومنین سے کیا مراد ہے - کیا فدک ہدیہ تھا یا میراث - شیعہ فورمز کے جاہلوں کا آپریشن - یزید نام رکھنے والے صحابہ کرام کی فہرست - امامت پر ایک شیعہ سنی مباحثہ - شیعہ کتب میں اہلبیت اور دیگر ممدوحین کا احوال - قرآن مجید اور مسئلہ توریث انبیاء - رجب کے کونڈے - مصحف فاطمہ، کتاب جفر اور ائمہ کی تضاد بیانیاں - شیعی دھرم اپنی کتب کی تاریکیوں میں -


#3 OFFLINE   Khalifa

Khalifa

    Senior Member

  • Senior Member
  • Topics: 19
  • Posts: 152
  • Thanked: 10 times
  • Joined: 22-October 08
  • Local time: 01:02 AM
  • Gender:Male
  • Location:UK
  • Religion:Islam (Sunni)

Posted 12 February 2012 - 07:59 PM

inko lashkaray Jhangvi or sipah sahaba kay talukaat to nazar  aaty hen  magar yeh Sipah Muhammad or  tahreeq Jafria kay  talukaat ko  kiun bhool jaty hen ??


Posted Image






Similar Topics Collapse

0 user(s) are browsing this forum

0 members, 0 guests, 0 anonymous users

Welcome to HCY Forum
Please Login or Register to use full features.